جے آئی ٹی کا کام آخری مراحل میں داخل ، قطری شہزادے کو تیسرا خط ارسال


Asad Mahmood Posted on July 07, 2017

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) سپریم کورٹ میں رپورٹ جمع کرانے سے پہلے ثبوت اور شواہد کیساتھ بیان ریکارڈ کرا ئیں ، قطری شہزادے کو جی آئی ٹی نے تیسرا خط لکھ دیا ، خطوط کی تصدیق نہیں تفتیش درکار ہے ، بیان ریکارڈ نہ کرایا تو سابقہ خطوط کی ساکھ پر اثر پڑ سکتا ہے ، آپ کیلئے یہ آخری موقع ہے ۔ روزنامہ دنیا کے مطابق پاناما لیکس کی تحقیقات کرنیوالی جے آئی ٹی نے قطری شہزادے حمد بن جاسم کے تیسرے خط کے جواب میں انہیں تیسرا اور آخری خط لکھ دیا ۔ ذمہ دار ذرئع کے مطابق جے آئی ٹی نے خط میں کہا ہے کہ سپریم کورٹ میں رپورٹ جمع کرانے سے قبل انہیں آخری موقع دیا جا رہا ہے کہ وہ اپنے دونوں خطوط کے تناظر میں دستاویزی ثبوت اور شواہد کے ساتھ اپنا بیان ریکارڈ کروا دیں ۔ خط میں قطری شہزادے کو واضح طور پر کہا گیا ہے کہ ان سے خطوط کی تصدیق نہیں تفتیش کرنی ہے ۔ اس لئے بیان ریکارڈ کرانے کا یہ آخری موقع دیا جا رہا ہے ۔ خط میں واضح کیا گیا ہے کہ بیان ریکارڈ نہ کرانے کی صورت میں سپریم کورٹ کی طرف سے کسی بھی متوقع حکم یا ریفرنس دائر کرنے کے احکامات جاری ہوئے تو پھر آپ کو متعلقہ عدالت میں پیش ہونا پڑے گا ۔ خط میں کہا گیا ہے کہ بیان ریکارڈ نہ کرانے اور کسی نئے موقف کی وجہ سے سابقہ خطوط کی ساکھ پر بھی اثر پڑ سکتا ہے ۔ اس سے قبل قطری شہزادے نے جے آئی ٹی کو اپنے تیسرے خط میں دوحہ آکر خط کی تصدیق کرنے کی دعوت دی تھی ۔ اس سلسلے
یں انہوں نے خط میں کہا تھا کہ پاکستان میں ان کا دائرہ اختیار نہیں بنتا ، اس لیے ٹیم دوحہ آنے کے حوالے سے اپنے شیڈول سے آگاہ کرے ، وہ ٹیم کا اپنے دفتر میں خیر مقدم کریں گے ۔